Results 1 to 14 of 14
Like Tree1Likes
  • 1 Post By Sultana

ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

This is a discussion on ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت within the Urdu Adab forums, part of the Urdu Poetry category; ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت ہماری زندگی میں کھبی کھبی ایسے واقعات ہوتے ہیں جن سے یاں ...

  1. #1
    Student
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    PAKISTAN
    Age
    33
    Posts
    528

    ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت


    ہماری زندگی میں کھبی کھبی ایسے واقعات ہوتے ہیں جن سے یاں تو ہمت بلکل ہی ٹوٹ جاتی ہے.یاپھر زندگی کو جینے کا ایک اور بہانہ مل جاتا ہے.
    آج سکینہ کے خاوند کو ملک سے باہر گئے دوسرا دن تھا.سکینہ گھر کے کاموں میں مصروف تھی.اس بات سے انجان کے اُس کے سُسرال والے اُس کے لئے ایک سازش تیار کر رہے ہیں.جس گھر میں ابھی سب بیٹھے تھے.سکینہ اُس ہی گھر کی مالکن تھی.وہ گھر لاہور کے شہر میں تھا.سکینہ کی ماں کا گھر سیالکوٹ کے ایک گاؤں میں تھا.
    سکینہ کے دیور نے اپنی ماں اور ایک بہن کے ساتھ مل کر یہ سازش کی کہ وہ آج کسی بہانے سے سکینہ کو اُس کے چھ بچوں سمیت گھر سے نکال دیں گے.خاوند توسر پر ہے نہیں ابھی.اور اس کی بوڑھی ماں بھی کونسا آنے والی ہے جلدی.سکینہ دوپہر کا کھانا بنا چُکی تو ساس کو کمرے سے بُلانے کے لئے گئی.ہنڈیاں میں نند نے آکر نمک اور ڈال دیا تاکہ بات شروع کرنے کا بہانہ مل سکے.بس ساس کا نوالہ مُنہ تک لے کر جانے کی دیر تھی کہ ساس نے سکینہ کو مارنا شروع کر دیا اور بات بڑھاتے بڑھاتے اتنی اگے لے گئے کہ سکینہ کو اُس کے بچوں سمیت گھر سے نکال دیا.اب سکینہ بے آسرا کھڑی اپنے ڈرے ہوئے بچوں کوچُپ کرا رہی تھی. خود کے آنسو رکتے نہ تھے.مگر اپنے بچوں کی خاطرخود کو سمبھالا.ویسے یہ حالات کوئی پہلی بار نہ تھے.یہ سلسلہ تب سے چل رہاتھا جب سے اُس کا سُسر فوت ہوا تھا.اور اب اُس کا اس گھر میں ایک ہی ہمدرد تھا اُس کا خاوند.مگر پردیس کی دوری کی وجہ سے اُس کو تو یہ بھی نہ معلوم تھا کہ اُس کی بیوی اور بچے اس وقت سڑک پر کھڑے ہیں.سکینہ نے ایک بار تو کسی گاڑی کے نیچے آجانا مناسب سمجھا پر اللہ اور اُس کے رسول کے حکم کے خلاف جانے کی اُس کی جرات نہ ہوئی.
    اپنے بچوں کو ساتھ لئے پیدل سیالکوٹ کی طرف چلنے لگی.پیسے نام کی کوئی چیز تواُس کے پاس تھی نہیں اس لئے یہ خاندان بھوکا پیاسا لمبی سنسان سڑک پرچلتارہا.یہاں تک کے رات سر پر آن کھڑی ہوئی.سکینہ سے اپنے بچوں کی بھوک اور پیاس کا عالم دیکھا نہ جاتا تھا دل ہی دل میں خون کے گھونٹ پیتی تھی اوربچوں کو اللہ کے فرشتوں کی کہانی سُناتے چلتی جاتی تھی.رات کو گہرا پاکر راستے پر آنے والے ایک قبرستان میں رات گزارنے کی سوچی.بچوں کو قبرستان میں چلنے کے لئے کہا.بچے ڈر رہے تھے.پر سکینہ نے بچوں کو سمجھایا کہ مسلمان کو کوئی جن بھوت نہیں پکڑتا ہاں بُرے لوگوں کو بھوت ستاتے ہیں.اور اگر تم کو کوئی بھوت دکھے یا ڈرائے تو اُس کو کلمہ سُنا دینا وہ تم سے ڈر کر بھاگ جائے گا.بچوں نے کھبی بھی اپنی ماں کو جھوٹ کہتے نہ سُنا تھا اس لئے ماں کی باتوں سے ایک اعتماد پا کر قبرستان میں رات گُزارنے چلے گے. سکینہ نے اپنی سر کی بڑی چادر زمین پر بچھا دی اور سب بچوں کو سُلا دیا.اور خود آسمان کو اپنی چادر بنا کر اللہ کے حضور رونے لگی.روتے روتے اُس کا دل کب ھلکہ ہو گیا اور زندگی کی رمق جاگ گئی اُس کو خود کو پتہ نہ چلا.صبح کے چھ بجے بچوں کو اُٹھایا اور پھر سے اپنے سفر پر نکل پڑی.اب وہ سیالکوٹ میں داخل ہو چُکی تھی.اپنے گاؤں میں جیسے ہی پہنچی لوگ اُس کو ایسی حالت میں دیکھ کر حیران رہ گئے.اور اُس کو اُس کے گھر تک لے گئے. سکینہ نے سارا قصہ اپنی ماں کو کہہ سُنایا.سکینہ کی ماں نے حوصلہ دیا اور کہا کہ سوائے اللہ کے اور کسی میں طاقت نہیں کسی کو برباد کرنے کی.تم صبر رکھو اللہ بہتر کرے گا.
    سات ماہ بعد سکینہ کا خاوند پاکستان واپس آگیا.گھر والوں سے پتہ چلا کہ سکینہ گھر چھوڑ کر چلی گئی ہے.پر سارا محلہ سکینہ کی بے قصوری کا گواہ تھا.سب نے اُس کو سہی بات سے آگاہ کیا.اُس کا خاوند بھاگا بھاگا سکینہ کے گھر گیا.وہاں اپنے بچوں اور بیوی کو سہی سلامت دیکھ کر اُس کی جان میں جان آئی.میاں نے سکینہ کو وہی رہنے کو کہا اور واپس پردیس چلا گیا دو مہینے کی کمائی لے کر واپز لوٹا.سکینہ کو گھر لے کر دیا اور اپنی زندگی کے شریک حیات کو پھر کوئی غم نہ دیا.
    دوستو یہ بہادر عورت میری ماں تھی.اب اس دُنیا میں نہیں ہیں.ایک عورت اگر اپنی زندگی کا اتنا مشکل مرحلہ اتنی جانبازی سے پار کر سکتی ہے تو ہم سب کیوں نہیں.مجھے اپنی زندگی کا جو لمحہ مشکل لگتا ہے تو اپنی ماں کے یادوں کو یاد کر کے حوصلہ بڑھ جاتا ہے.
    اُمید ہے کہ میری یہ آپ بہتی آپ سب کے لئے ایک حوصلے کا پیغام ہو گا.
    شُکریہ
    رائٹر
    ujalaa likes this.

  2. #2
    Senior Student mehek's Avatar
    Join Date
    Jan 2009
    Posts
    124

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    bs itna hi kahon gi k salaam hy aap ki maan ki azmat ko jinhon ny ass kathan waqt mein hosla nhi hara aur Allah par bharosa rakha ...jin k saath Allah ki zaat hy onn ka koi kuchh nahi bigaar sakta ...

  3. #3
    iTT Student
    Join Date
    Jul 2010
    Location
    Karachi
    Age
    27
    Posts
    14

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    Salam! bht hoslay walin thin ap ki maa

  4. #4
    iTT Student khurram_613's Avatar
    Join Date
    May 2010
    Location
    sialkot pakistan
    Age
    33
    Posts
    32

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    ..........ALLAH UN KO APNY JAWAR E REHMAT MAEN JAGA DY......
    KHUDAR LOG ASY HE HOTY HAEN
    KHURRAM_613
    SHAHZAD

  5. #5
    Jee
    Jee is offline
    ITT Student
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Pakistan
    Age
    30
    Posts
    19

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    ALLAH Maa jee ko Jannat main jagah day or aap sab ko Sabar day.
    Or ALLAH aap ko Dunya jahan ki har kushi or sakoon day jo aap k liye behtar ho.
    AAMEEN YA RABUL AALAMEEN
    Thank u very much hum sab k sath apni story share krny ka

  6. #6
    iTT Student
    Join Date
    Feb 2011
    Location
    multan
    Age
    30
    Posts
    22

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    wonderful ap ka bohat bohat sukriya

  7. #7
    VIP Rajkumari's Avatar
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Jeddah
    Age
    28
    Posts
    3,226

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    Bht Khoob.>!
    Shukriya..!
    ღ♥ Дpиy TДДruf K Liye ItиД Hi KДДfi HДi,
    *
    *
    Jo RДsty ДДm Ho JДiи Hum Uи PДr ChДlД иДhi KДrty
    !ღ ♥
    ✿Rαjкυмαri ✿◕ ‿ ◕✿
    [IMG]http://i53.*******.com/oa5htk.jpg[/IMG]

  8. #8
    Member
    Join Date
    Feb 2010
    Location
    Pakistan
    Posts
    3,594

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    Salam Maan

  9. #9
    Senior Student goldenpearl's Avatar
    Join Date
    Jan 2011
    Location
    lahore
    Posts
    292

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    Nice sharing
    free study in Germany: http://www.********************.com/germany.jsp

  10. #10
    Senior Student inaam1's Avatar
    Join Date
    Aug 2010
    Location
    گوجرخان
    Posts
    116

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    واہ جی واہ
    زبردست
    [IMG]http://i53.*******.com/nmeypx.gif[/IMG]

  11. #11
    iTT Student
    Join Date
    Oct 2011
    Location
    laore
    Age
    30
    Posts
    77

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت


  12. #12
    Senior Student Prince Shaan's Avatar
    Join Date
    Nov 2010
    Location
    KARACHI
    Posts
    217

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    Bht Khoob

  13. #13
    iTT Student Qasim31's Avatar
    Join Date
    Aug 2012
    Location
    Gujranwala
    Posts
    3

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    boht khoob

  14. #14
    iTT Student ujalaa's Avatar
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    pakistan
    Posts
    13

    Re: ممتا کا جزبہ تھا یا عورت کی طاقت

    bht zabrdast yeh ai lesson hai hum sab k liye k kise tor per b himat or sabar ka daaman na corien Allah pak us ba himat khatoon ki mahgfrat atta frmaaye Ameen

Similar Threads

  1. Replies: 9
    Last Post: 28th October 2014, 10:50 PM
  2. Replies: 4
    Last Post: 26th March 2011, 03:19 AM
  3. Replies: 12
    Last Post: 30th July 2010, 06:55 PM
  4. Replies: 0
    Last Post: 24th July 2009, 11:56 PM
  5. Replies: 7
    Last Post: 15th June 2009, 11:31 AM

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •