Results 1 to 4 of 4

سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے

This is a discussion on سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے within the Open Forum forums, part of the Mera Deen Islam category; زبیر علی زئی نے شفیق الرحمان کی کتاب نماز نبوی کے پرانے ایڈیشن میں مقدمہ میں یہ بیان کیا کہ ...

  1. #1
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے

    زبیر علی زئی نے شفیق الرحمان کی کتاب نماز نبوی کے پرانے ایڈیشن میں مقدمہ میں یہ بیان کیا کہ اس کتاب میں کوئی ضعیف حدیث نہیں ہے۔
    ( مقدمہ نماز نبوی، پران ایڈیشن صفحہ 16)
    اس کتاب میں شفیق الرحمٰن نے سینہ پہ ہاتھ باندھنے کے لئے حضرت وائل بن حجر رضی اللہ کی صحیح ابن خزیمہ والی حدیث پیش کی کہ نبی کریم ﷺ سینہ پہ ہاتھ باندھتے تھے۔
    (نماز نبوی، شفیق الرحمٰن، صفحہ 117، مقدمہ زبیر علی زئی)

    اسی کتاب نماز نبوی کا جدید ایڈیشن غیر مقلدین کے متکبہ دار السلام سے شائع ہوا اور اس کا مقدمہ بھی زبیر علی زئی کا ہے جس نے یہاں بھی کہا ہے کہ وثوق سے کہا جا سکتا ہے کہ اس کتاب میں ضعیف حدیث نہیں ہے۔
    ( مقدمہ نماز نبوی، صفحہ 38)
    لیکن جدید ایڈیشن میں سینہ پہ ہاتھ باندھنے والے موضوع میں سے انہوں نے حضرت وائل بن حجر کی صحیح ابن خزیمہ والی وہ روایت نکال دی جو انہوں نے پرانے ایڈیشن میں شائع کی تھی۔
    ( نماز نبوی، جدید ایڈیشن، مکتبہ دار السلام، صفحہ 184)

    اس طرح حضرت وائل بن حجر کی سینہ پہ ہاتھ باندھنے والی روایت کو اپنی کتاب سے نکال دینا اور مقدمہ میں زبیر زئی کا یہ تسلیم کرنا کہ اس کتاب میں کوئی ضعیف حدیث نہیں ہے اس بات کی دلیل ہے کہ سینہ پہ ہاتھ باندھنے کی یہ روایت ضعیف ہے۔کیونکہ اگر یہ روایت صحیح ہوتی تو غیر مقلد اس روایت کو جدید ایڈیشن سے نہ نکالتے لیکن غیر مقلدین کا اس روایت کو جدید ایڈیشن سے نکالنا اس بات کی تصدیق ہے کہ یہ روایت ضعیف ہے۔
    Attached Images Attached Images
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  2. #2
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے







    سلام


    میرے بھائی جب آپ لوگوں کے نزدیک اللہ اور رسول صلی اللہ وسلم سے زیادہ لوگوں کی باتیں زیادہ اہم ہیں تو یہ بھی پڑھ لیں


    ہمارے لیے لوگوں سے زیادہ اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ وسلم کی بات زیادہ اہم ہے







    فقہ حنفی کے بہت سے مسائل صحیح حدیث سے ثابت نہیں۔اعترافِ حقیقت!

    بریلوی مکتبہ فکر کے مشہور عالم اور دارالعلوم نعیمیہ کراچی کے ’شیخ الحدیث‘ جناب غلام رسول سعیدی صاحب اپنی کتاب’’نعمۃ الباری فی شرح صحیح البخاری‘‘ میں’ حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کو غسل کس نے دیا؟‘ مسئلہ کے تحت ان فقہاء احناف کا ردّ کرتے ہوئے جن کے
    نزدیک حضرت علی رضی اللہ عنہ کا حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کو اپنے ہاتھ سے غسل دینا کسی صحیح حدیث سے ثابت نہیں ہے،رقمطراز ہیں




    حضرت علی کے حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کو غسل دینے پر ایک شبہ کا ازالہ

    بعض علماء احناف نے اس پر اعتراض کرتے ہوئے لکھا ہے




    یہ کسی حدیث صحیح سے ثابت نہیں کہ مولیٰ علی کرم اللہ وجہہ الکریم نے خود اپنے ہاتھ سے غسل دیا۔ میں کہتا ہوں کہفقہ حنفی اور اہل سنت کے اور بھی مسائل ہیں جو حدیث صحیح سے ثابت نہیں ہیں،پھر حضرت علی کے غسل دینے کے مسئلہ میں حدیث صحیح
    کا مطالبہ کیوں کیا جاتا ہے۔

    فقہاء احناف کے نزدیک نماز میں ناف کے نیچے ہاتھ باندھنا سنت ہے حالانکہ یہ سنت سنن ابوداؤد کی جس حدیث سے ثابت ہے وہ بالاتفاق ضعیف ہے۔








































    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  3. #3
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے





    اگر امام کے کسی مقلد کے پاس کوئی صحیح حدیث پہنچے اور وہ اس امام کے قول کے خلاف ہو تو اسے کیا کرنا چاہیے؟ اور جو یہ کہہ کر اس حدیث کو ٹال دے کہ یہ میرے مذہب میں نہیں وہ مسلمان رہا یا اسلام سے خارج ہو گیا اور ایسے وقت مقلد کو کیا کرنا چاہیے ہے؟



    مفتی تفی عثمانی صاحب مولانا اشرف علی تھانوی مرحوم کی کتاب "الحیلة الناجزة في الحلیلة العاجزة" کے نئے ایڈیشن کے دیباچے میں فقہ حنفی سے خروج کا جواز تسلیم کرتے ہوئے اس حقیقت کا اعتراف کرتے ہیں کہ فقہ حنفی میں شوہر سے گلوخلاصی کی خواہش مند عورتوں کو پیش آنے والی مشکلات کا کوئی حل نہیں ہے۔ انہوں نے ایسے بیشتر مسائل میں مالکی مذہب کے مطابق فتویٰ دیا ہے۔ اگر فقہ حنفی مکمل ضابطۂ حیات ہے تو اس مسئلہ کا حل کیوں نہیں ہے؟













    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  4. #4
    Senior Student BoOr's Avatar
    Join Date
    Mar 2013
    Location
    Pakistan
    Posts
    268

    Re: سینے پہ ہاتھ باندھنے کی روایت ضعیف ہے

    ap bhaiyon sa meri guzarish ha k ap mujy bata dain kia esa koi tareka ha k ham sab ka fiqa ek ho jae or ham muslims kehlain na alag alag fiqon k namon sa jany jain plzzz agar apki nazar ma esa koi tareeka ha to wo kia ho sakta ha k ham sab ek ho jaein?

Similar Threads

  1. Replies: 2
    Last Post: 22nd January 2013, 09:48 PM
  2. Replies: 0
    Last Post: 17th January 2012, 03:41 PM
  3. Replies: 1
    Last Post: 22nd January 2011, 04:56 PM
  4. Replies: 11
    Last Post: 24th April 2010, 08:11 PM
  5. Replies: 3
    Last Post: 30th September 2009, 07:40 PM

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •