Page 2 of 2 FirstFirst 12
Results 21 to 34 of 34

غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

This is a discussion on غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ within the Open Forum forums, part of the Mera Deen Islam category; Lovey jo alfaaz tum logu ne imam abu haneefa(RA) k baary mie use kiye hain uper meri posts main dekho ...

  1. #21
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Lovey jo alfaaz tum logu ne imam abu haneefa(RA) k baary mie use kiye hain uper meri posts main dekho wesy hi lafaz apny ulma k baary main bhi use kar k dekhna.
    Attached Images Attached Images
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  2. #22
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post
    Asalam o alikum to all muslims.

    Lovely tum jahil ho ya khud jahil ban jaaty ho????????????????????

    yahan baat manany ka topic hi nahin .. topic ye hay k jo zuban aor lafaz tum naam nihaad ahlehadees hazrat imam abu haneefa(RA) k baary mai use karty ho kiya wo en ki touheen nahin????


    mien kehta hun k zubair ali zai bahut baara gustakh-e-ayema hay aor talib ur rehman bhi jahil aor quran aor hadees se la ilm hay na en ko quran aata hay na hadees bas fazool batin kar k logu ko imam abu haneefa(RA) se badzan karty hain aor en ki touheen karty hain..........


    aor aaj kal k tum jiyse log bhi imam abu haneefa(RA) k burra kehty ho lakin es se imam sahib k darjaat mie izafa ho ga aor jiysa k akabreen ummat ne imam abu haneefa(RA) ko siqa aor salaf salheen mie tasleem kiya hay aor jiysa k imam sahib k khilaf hasad ki wajah se logu ne en pe jirah ki jo qabil-e-qabool nahin aysa hi tum log imam sahib k taasub aor hasad main jal jal k maro ge.

    ​سچ کڑوا ہوتا ہے

  3. #23
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Quote Originally Posted by lovelyalltime View Post
    ​سچ کڑوا ہوتا ہے

    Asalam o alikum to all muslims.

    ye sach tum logu k liye bahut karwwa hay kyun k es se logu k saamny tumhara dhooka zahir ho gya hay k jo tum log jhoote bolty ho k pakistan k ahlehadees ayema karam aor imam abu haneefa(RA) ka aehtraam karty hain.
    Attached Images Attached Images
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  4. #24
    iTT Student
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Karachi
    Posts
    11

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    ye lovellyalltime sari zindagi bhi jo asal topic chal rha ho ga us ka jawab nahi dy ga,balky 1 hi bat chapy jaye ga js ka thread sy koi taluq bhi na ho.

  5. #25
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Asalam o alikum to all muslims

    Imam abu hanifa(RA) ki azmat janany k liye ye 2 topic perh lain.

    Imam azam abu hanifa(RA) ki muhadisana heseyat

    Imam azam abu haneefa(RA) aor akabreen ummat
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  6. #26
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

    عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کی کتاب " كتاب السنة " میں
    امام ابوحنیفہ رحمة اللہ علیہ پر خلق قرآن کے کفریہ عقیدہ کا اتہام ؟!

    امام احمد بن حنبل علیہ الرحمة کے فرزند عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کی ایک مشہور عربی کتاب ہے :
    كتاب السنة
    کئی صدی قبل تحریر کردہ اس کتاب میں امام ابوحنیفہ رحمة اللہ علیہ کے متعلق ایک متنازعہ باب شامل ہے۔ اس باب میں اُس دَور کے علماء و ائمہ کے اقوال نقل کئے گئے ہیں کہ : امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کی وفات خلق قرآن کے کفریہ عقیدہ پر ہوئی تھی۔

    یہ عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کا اجتہاد تھا کہ انہوں نے امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کے بارے میں علماء کرام کے اقوال نقل فرمائے۔
    حالانکہ امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) پر کی گئی بعد کی تحقیق سے ثابت ہوتا ہے کہ آپ بالجملہ سلف الصالحین کے ہی عقیدہ و منہج کے تابع تھے ، الحمدللہ۔

    یہی وجہ ہے کہ امام ابن تیمیہ علیہ الرحمة نے جب اپنا مشہور رسالہ
    رفع الملام عن الأئمة الأعلام {مشہور ائمہ کرام پر کی جانے والی ملامتوں کا ازالہ}
    تحریر کیا تو اس میں امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کے ساتھ دیگر تمام ائمہ کا ذکرِ خیر ہی فرمایا ہے۔

    امام طحاوی (رحمة اللہ علیہ) بھی لکھتے ہیں کہ :
    علماء کرام کا اب اس بات پر اجماع ہو گیا ہے کہ امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) سے متعلق اتہامات کو مزید روایت نہ کیا جائے گا اور ان کا اب صرف ذکرِ خیر ہی کیا جائے گا۔

    یوں سعودی عرب میں ملک عبدالعزیز کے دورِ امارت میں جب "كتاب السنة" شائع کی گئی تو اُس وقت کے مکہ مکرمہ کے چیف جسٹس شیخ علامہ عبداللہ بن حسن آل الشیخ (رحمة اللہ علیہ) نے وہ مکمل باب (امام ابوحنیفہ کے خلاف اتہامات) طباعت سے نکال دیا۔
    اُس باب کو نکالنا خیانت یا بددیانتی نہیں تھی۔ وہ دراصل شرعی حکمت تھی کیونکہ جو باتیں اُس باب میں موجود تھیں ، اُن باتوں کا اپنا ایک وقت تھا جو گزر چکا۔
    اس کے علاوہ مصلحت اور اجتہاد کا تقاضا تھا کہ اس باب کو ہٹا دیا جائے کیونکہ لوگ ان اتہامات کی وجہ سے کتاب میں موجود سنت اور صحیح عقائد کے بیانات کو پڑھنے سے رک جاتے۔

    حال ہی میں ایک علمی ریسرچ کے نام پر "كتاب السنة" شائع کرتے ہوئے اس میں وہ متنازعہ باب اس دعوے کے ساتھ شامل کیا گیا کہ : امانت کا یہی تقاضا ہے۔

    بلاشبہ یہ دعویٰ صحیح نہیں ہے !
    کیونکہ ۔۔۔۔ اِس طرح کی کتابوں کی تالیف سے علماء کرام کا جو اصل مقصد ہوتا ہے ، اسے جانتے ہوئے ، زمان و مکان و حال کے اختلاف کا لحاظ رکھتے ہوئے اور شرعی سیاست کو بروئے کار لاتے ہوئے علماء کرام نے متنازعہ باب کو شامل نہ کرنے کا درست فیصلہ کیا تھا۔

    سماحة الشیخ عبدالعزیز رحمة اللہ علیہ کے سامنے جب یہ نئی کتاب پیش کی گئی (جس میں متنازعہ باب شامل ہے) تو آپ نے فرمایا :
    الذي صنعه المشايخ هو المتعين ومن السياسة الشرعية أن يحذف وإيراده ليس مناسبا. وهذا هو الذي عليه نهج العلماء.
    جو کام (باب کو حذف کرنے کا) مشائخ کرام نے کیا تھا وہی متعین بات تھی اور اسے حذف کرنا شرعی سیاست کے عین مطابق تھا اور اسے واپس کتاب میں داخل کر دینا مناسب نہیں ، یہی علماء کرام کا منہج ہے !

    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  7. #27
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Asalam o alikum to all muslism.

    mubashir sahib ye naam nihaad ahlehadees imam abu haneefa(RA) ka jitna ahtraaam karty hain wo aap yahan dekh lain aor sath ye bhi dakeh lain k saudia walu ka kiya mazhab hay imam abu haneefa(RA) k baary main aor saudia ki rattt lagany waly ye jahil halehadees sudia k fatwa ka aor un ki baatu ka kitna ahtraam karty hain?????????????


    imam abu haneefa(RA) k bughaz mie itny aagy hai k ye imam ibn taaemya(RA) ki baat ka inkaar kar rahy hain jo unhun ne imam abu haneefa(RA) k baary mai kahi.
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  8. #28
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    i love sahaba bhai please aissi bataian na kareen

  9. #29
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post
    Asalam o alikum to aal muslims.

    امام ابن تیمیہ علیہ الرحمة نے جب اپنا مشہور رسالہ
    رفع الملام عن الأئمة الأعلام {مشہور ائمہ کرام پر کی جانے والی ملامتوں کا ازالہ}
    تحریر کیا تو اس میں امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کے ساتھ دیگر تمام ائمہ کا ذکرِ خیر ہی فرمایا ہے۔


    یوں سعودی عرب میں ملک عبدالعزیز کے دورِ امارت میں جب "كتاب السنة" شائع کی گئی تو اُس وقت کے مکہ مکرمہ کے چیف جسٹس شیخ علامہ عبداللہ بن حسن آل الشیخ (رحمة اللہ علیہ) نے وہ مکمل باب (امام ابوحنیفہ کے خلاف اتہامات) طباعت سے نکال دیا۔
    اُس باب کو نکالنا خیانت یا بددیانتی نہیں تھی۔ وہ دراصل شرعی حکمت تھی کیونکہ جو باتیں اُس باب میں موجود تھیں ، اُن باتوں کا اپنا ایک وقت تھا جو گزر چکا۔
    اس کے علاوہ مصلحت اور اجتہاد کا تقاضا تھا کہ اس باب کو ہٹا دیا جائے کیونکہ لوگ ان اتہامات کی وجہ سے کتاب میں موجود سنت اور صحیح عقائد کے بیانات کو پڑھنے سے رک جاتے۔


    حال ہی میں ایک علمی ریسرچ کے نام پر "كتاب السنة" شائع کرتے ہوئے اس میں وہ متنازعہ باب اس دعوے کے ساتھ شامل کیا گیا کہ : امانت کا یہی تقاضا ہے۔

    بلاشبہ یہ دعویٰ صحیح نہیں ہے !
    کیونکہ ۔۔۔۔ اِس طرح کی کتابوں کی تالیف سے علماء کرام کا جو اصل مقصد ہوتا ہے ، اسے جانتے ہوئے ، زمان و مکان و حال کے اختلاف کا لحاظ رکھتے ہوئے اور شرعی سیاست کو بروئے کار لاتے ہوئے علماء کرام نے متنازعہ باب کو شامل نہ کرنے کا درست فیصلہ کیا تھا۔

    سماحة الشیخ عبدالعزیز رحمة اللہ علیہ کے سامنے جب یہ نئی کتاب پیش کی گئی (جس میں متنازعہ باب شامل ہے) تو آپ نے فرمایا :
    الذي صنعه المشايخ هو المتعين ومن السياسة الشرعية أن يحذف وإيراده ليس مناسبا. وهذا هو الذي عليه نهج العلماء.
    جو کام (باب کو حذف کرنے کا) مشائخ کرام نے کیا تھا وہی متعین بات تھی اور اسے حذف کرنا شرعی سیاست کے عین مطابق تھا اور اسے واپس کتاب میں داخل کر دینا مناسب نہیں ، یہی علماء کرام کا منہج ہے
    !




    میرے بھائی کو امام ابو حنیفہ رحم اللہ پر کی گئی جرح کو چھپانے کے لیے شیخ ابن تیمیہ رحم اللہ اور سعودی عرب والے یاد آتے ہیں - لیکن جب ہم اسی شیخ ابن تیمیہ رحم اللہ کی کتاب جو سعودی عرب سے ہی پبلش ہوئی ہے - میں سے ان کے اقوال جو تقلید کے خلاف ہیں پیش کرتے ہیں تو آنکھیں چرا لیتے ہیں - چلیں دیکھتے ہیں کہ اب یہ میرے بھائی کیا کہتے ہیں


    شیخ الاسلام ابن تیمیہ رحمہ اللہ کہتے ہیں۔۔

    وَإِذَا كَانَ الرَّجُلُ مُتَّبِعًا لِأَبِي حَنِيفَةَ أَوْ مَالِكٍ أَوْ الشَّافِعِيِّ أَوْ أَحْمَد: وَرَأَى فِي بَعْضِ الْمَسَائِلِ أَنَّ مَذْهَبَ غَيْرِهِ أَقْوَى فَاتَّبَعَهُ كَانَ قَدْ أَحْسَنَ فِي ذَلِكَ وَلَمْ يَقْدَحْ ذَلِكَ فِي دِينِهِ. وَلَا عَدَالَتِهِ بِلَا نِزَاعٍ؛ بَلْ هَذَا أَوْلَى بِالْحَقِّ وَأَحَبُّ إلَى اللَّهِ وَرَسُولِهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مِمَّنْ يَتَعَصَّبُ لِوَاحِدِ مُعَيَّنٍ غَيْرِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ كَمَنْ يَتَعَصَّبُ لِمَالِكِ أَوْ الشَّافِعِيِّ أَوْ أَحْمَد أَوْ أَبِي حَنِيفَةَ وَيَرَى أَنَّ قَوْلَ هَذَا الْمُعَيَّنِ هُوَ الصَّوَابُ الَّذِي يَنْبَغِي اتِّبَاعُهُ دُونَ قَوْلِ الْإِمَامِ الَّذِي خَالَفَهُ. فَمَنْ فَعَلَ هَذَا كَانَ جَاهِلًا ضَالًّا؛ بَلْ قَدْ يَكُونُ كَافِرًا؛ فَإِنَّهُ مَتَى اعْتَقَدَ أَنَّهُ يَجِبُ عَلَى النَّاسِ اتِّبَاعُ وَاحِدٍ بِعَيْنِهِ مِنْ
    هَؤُلَاءِ الْأَئِمَّةِ دُونَ الْإِمَامِ الْآخَرِ فَإِنَّهُ يَجِبُ أَنْ يُسْتَتَابَ فَإِنْ تَابَ وَإِلَّا قُتِلَ.

    [مجموع الفتاوى 22/ 249]

    اوراگر کوئی شخص امام ابوحنیفہ یا امام مالک یا امام شافعی یا امام احمد رحمہم اللہ کا متبع ہو : اوربعض مسائل میں دیکھے کہ دوسرے کا مذہب زیادہ قوی ہے اوراس کی اتباع کرلے تو اس کا یہ کام بہتر ہوگا اوراس سے اس کے دین یا عدالت میں بالاتفاق کوئی عیب نہیں لگے گا، بلکہ یہ شخص زیادہ حق پر اور اللہ اوراس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے نزدیک زیادہ محبوب ہوگا اس شخص کی بنسبت جواللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے علاوہ کسی معین( امام) کے لئے تعصب رکھے۔
    مثلا کوئی امام مالک یا امام شافعی یا امام احمد یا امام ابوحنیفہ رحمہم اللہ کا متعصب ہو اور یہ سمجھے کہ اس معین امام کا قول ہی درست ہے اوراسی کی اتباع کرنی چاہئے نہ کہ اس کے مخالف کسی دوسرے امام کی ، "تو جو شخص بھی ایسا کرے وہ جاہل اور گمراہ ہے بلکہ بعض صورتوں میں وہ کافر ہو جاتا ہے" چنانچہ جب وہ یہ اعتقادر کھے کہ لوگوں پر ان ائمہ (اربعہ) میں سے کسی ایک معین امام ہی کی اتباع کرنی ہے اوردوسرے کسی امام کی نہیں، تو ایسی صورت میں واجب ہوگا کہ اس شخص سے توبہ کرائی جائے، پھر اگر توبہ کرلے توٹھیک ورنہ اسے قتل کردیا جائے گا(کیونکہ ایسی صورت میں وہ کافر ہوجائے گا)


    علامہ ابن تیمیہ رحمہ اللہ آگے فرماتے ہیں

    بَلْ غَايَةُ مَا يُقَالُ: إنَّهُ يَسُوغُ أَوْ يَنْبَغِي أَوْ يَجِبُ عَلَى الْعَامِّيِّ أَنْ يُقَلِّدَ وَاحِدًا لَا بِعَيْنِهِ مِنْ غَيْرِ تَعْيِينِ زَيْدٍ وَلَا عَمْرٍو. وَأَمَّا أَنْ يَقُولَ قَائِلٌ: إنَّهُ يَجِبُ عَلَى الْعَامَّةِ تَقْلِيدُ فُلَانٍ أَوْ فُلَانٍ فَهَذَا لَا يَقُولُهُ مُسْلِمٌ

    [مجموع الفتاوى 22/ 249]

    زیادہ سے زیادہ یہ بات کہی جاسکتی ہے کہ عام آدمی کے لئے جائز ہے یا مناسب ہے یا واجب ہے کہ بغیر زید، عمرو کی تعین کے کسی بھی شخص کی تقلید (یعنی تقلید غیر شخصی) کرے، رہا کسی کا یہ کہنا کہ کہ عام آدمی پر واجب ہے کہ فلان یا فلاں ہی کی تقلید(یعنی تقلید شخصی) کرے تو یہ
    بات کوئی مسلمان نہیں کہہ سکتا۔






























    Last edited by lovelyalltime; 23rd September 2013 at 06:14 PM.

    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  10. #30
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    ہاہاہاہا۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    لولی یہ کتاب سعودیہ سے چھپی ہے اور سعودیہ کے اکابر علماء عبدالعزیز الشیخ، ابن باز، صالح العثیمن رحم اللہ عنھم نے اس میں موجود جرح کو ناجائز قرار دیا ہے اور تسلیم کرنے سے انکار کیا ہے۔۔ اس کا جواب سی ٹاپک میں موجود ہے پڑھ لو۔۔

    اس کے بعد بھی نہیں مانتے تو ایک کام کرو۔

    یہ کتاب اور تمام جرح اگر سچی ہے اور تم بھی امام صاحب رح پہ جو الزامات لگاتے ہو اگر وہ سچے ہیں تو اپنے کسی غیر مقلد عالم کو دکھاو اور امام صاحب کے بارے میں فتوی لے آو۔۔۔

    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

  11. #31
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ







    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post



    امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) پر کی گئی بعد کی تحقیق سے ثابت ہوتا ہے کہ آپ بالجملہ سلف الصالحین کے ہی عقیدہ و منہج کے تابع تھے ، الحمدللہ۔





    میرا بھائی خود ہی کہہ رہا ہے کہ امام ابو حنیفہ رحم اللہ سلف صالحین کے ہی عقیدہ پر ہی تھے

    لکن حیرت ہے کہ یہ اپنے آپ کو حنفی کہتے ہیں لیکن عقائد میں ابومنصور ماتریدی اور ابوالحسن اشعری کا اتباع کرتے ہیں

    اور

    مسائل میں امام اعظم ابوحنیفہ علیہ الرحمة (کثر اللہ جمعہم) کا اتباع کرتے ہیں

    کیا یہ منافقت نہیں



    ثبوت



    Answer: Darul Ifta Deoband India






    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  12. #32
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ




    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post


    امام طحاوی (رحمة اللہ علیہ) بھی لکھتے ہیں کہ :علماء کرام کا اب اس بات پر اجماع ہو گیا ہے کہ امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) سے متعلق اتہامات کو مزید روایت نہ کیا جائے گا اور ان کا اب صرف ذکرِ خیر ہی کیا جائے گا۔








    یہاں پر امام طحاوی کی بات کو مانا جا رہا ہے

    لیکن یہاں نہیں

    فیصلہ خود کریں


    ثبوت


    http://www.ittaleem.com/zaarori-malo...40-1722-a.html













    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  13. #33
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ





    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post
    Quote Originally Posted by i love sahabah View Post


    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم


    عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کی کتاب " كتاب السنة " میں
    امام ابوحنیفہ رحمة اللہ علیہ پر خلق قرآن کے کفریہ عقیدہ کا اتہام ؟!

    امام احمد بن حنبل علیہ الرحمة کے فرزند عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کی ایک مشہور عربی کتاب ہے

    كتاب السنة

    کئی صدی قبل تحریر کردہ اس کتاب میں امام ابوحنیفہ رحمة اللہ علیہ کے متعلق ایک متنازعہ باب شامل ہے۔ اس باب میں اُس دَور کے علماء و ائمہ کے اقوال نقل کئے گئے ہیں کہ : امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کی وفات خلق قرآن کے کفریہ عقیدہ پر ہوئی تھی۔

    یہ عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ کا اجتہاد تھا کہ انہوں نے امام ابو حنیفہ (رحمة اللہ علیہ) کے بارے میں علماء کرام کے اقوال نقل فرمائے۔









    یہی تو میں اپنے بھائی سے پوچھ رہا ہوں کہ


    امام احمد بن حنبل علیہ الرحمة کے فرزند عبداللہ بن احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ

    نے یہ لکھ کر امام ابو حنیفہ رحم اللہ سے بغض کیا















    اللہ کے رسول صلی اللہ وسلم اور صحابہ سے بغض رکھنے والے اور حضرت امام ابو حنیفہ سے بغض رکھنے والے دونوں میں کیا فرق ہے - کیا آپ بتا سکتے ہیں . کیا دونوں کی سزا برابر ہے - کیا دونوں کا ٹھکانہ جہنم ہے - اگر کوئی شخص اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ وسلم کی وجہ سے امام ابو حنیفہ سے بغض رکھتا ہے تو کیا وہ ٹھیک ہے - اور اگر کوئی شخص اللہ کے رسول صلی اللہ وسلم اور صحابہ سے امام ابو حنیفہ کی وجہ سے بغض رکھتا ہے تو کیا وہ ٹھیک ہے -













    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  14. #34
    iTT Captain
    Join Date
    Aug 2009
    Location
    pakistan
    Posts
    547

    Re: غیر مقلدین کی انٹرنیٹ پر امام ابو حنیفہ رھ

    لولی تمہاری پوسٹ دیکھ کر مجھے یقین ہو گیا ہے کہ غیر مقلدین سے ذیادہ جاہل اور کوئی نہیں ہے۔۔
    سب سے پہلی بات کہ اس کا جواب سعودیہ کے اکابر علماء نے دیا ہے تو کیا تم ان سے ذیادہ بڑے محقق ہو جو ان کی بات کو رد کر رہے ہو؟؟
    سعودیہ کے ان علماء کی بات کو کس دلیل کی بناء پر رد کیا؟؟؟؟


    سب سے آخری اور اہم بات کہ جو حوالے تم نے دئے مرجئیہ ہونے کے یا جہمی ہونے کے تو اور یہ کتاب اور تمام جرح اگر سچی ہے اور تم بھی امام صاحب رح پہ جو الزامات لگاتے ہو اگر وہ سچے ہیں تو اپنے کسی غیر مقلد عالم کو دکھاو اور امام صاحب کے بارے میں فتوی لے آو۔۔۔

    abu hanifa.gif
    [IMG]http://i29.*******.com/oqabf5.jpg[/IMG]

Page 2 of 2 FirstFirst 12

Similar Threads

  1. Replies: 1
    Last Post: 3rd January 2012, 04:45 AM
  2. Replies: 0
    Last Post: 29th December 2011, 05:19 PM
  3. Replies: 0
    Last Post: 3rd December 2010, 11:04 PM

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •