Page 2 of 3 FirstFirst 123 LastLast
Results 21 to 40 of 48
Like Tree10Likes

کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

This is a discussion on کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا within the Open Forum forums, part of the Mera Deen Islam category; Originally Posted by paki786 بسم اللہ الرحمن الرحیم لولی آل ٹایم صاحب آپ کہتے ہیں کہ آپ کس طرح کہ ...

  1. #21
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Quote Originally Posted by paki786 View Post
    بسم اللہ الرحمن الرحیم

    لولی آل ٹایم صاحب آپ کہتے ہیں کہ

    آپ کس طرح کہ سکتے ھیں کہ کسسی ایک آدمی کی تقلید کی جا سکتی ہے. کیا یہ ممکن ہے کہ جس آدمی کی تقلید کی جاے اوس کی ہر بات ٹھیک ہے


    جناب کسی ایسے شخص کی تقلید جس کی زندگی دین اسلام پر مقدور بھر ہو، ایسے شخص کی تقلید سے دین بڑی تیزی سے زندگی میں آتاہے، اور اللہ تعا لی خود قرآن پاک میں فرماتا ہے


    کو نوا مع الصادقین


    جسکا مفہوم ھے کہ


    سچوں کا ساتھ اختیار کرو


    اور آپ کہتے ہیں




    اگر آپ فقہ حنفی کو لیں یا فقہ شافی کو لیں یا فقہ حمبلی یا فقہ مالکی کو لقن کیا یہ صحیح ہے کہ ایس فقہ کی ساری باتیں صحیح ھیں.


    تو جناب فقہ کا مآخذ قرآن و حدیث ہے.


    اور امام ابو حنیفہ رحمتہ اللہ اور دوسرے آءمہ نے جو فقہ
    مرتب کی ہے اسکا مآخذ قرآن و حدیث ہے.




    اور جو یہ کہا گیا ہے کہ




    اگر یہ بات صحیح ہے تو این سب کو یہ کہنے کی ضرورت کیوں ہوئی کہ اگر ہماری بات قرآن اور حدیث سے ٹکرا جا ے تو دیوار سے مر دین


    تو اس با ت کا فیصلہ علماء کرام کریں تو بہتر ہے اسکو یوں سمجھیں کسی مقدم میں ماہرانہ راءے لینے کے لے آپ کسی پان والے سے رجوع نہیں کرںیگے بلکہ کسی ماہر وکیل سے ہی رابطہ کریںگے بصورت دیگر نقصان کا اندیشہ ھے یہی سوچ اگر دین کے معاملے میں بھی اختیار کی جاے تو غقلمندی


    آپ نے نسائ شریف کی حدیث پاک اور ھدایہ کی عبارت میں جو تناقص ظاھھر کیا ہے وہ صحیح نہیں
    اگر آپ نسائ شر یف کے مزکورہ باب میں اور احادیث مبارکہ پر غور کریں تو یہ بات واضح ہو جا ہیگی کہ یہ
    عمل مکروہ ھے اور مکروہ اور حرام میں فرق ھے





    آپ سے سوال کیا کیا اور آپ نے جواب کیا دیا پہلے اپنی ہدایہ پڑھیں اور پھر احادیث کی بوکس پڑھیں انشاللہ آپ کو وازہ فرق نظر آیا گا
    shizz likes this.

  2. #22
    iTT Star udaasc's Avatar
    Join Date
    Aug 2008
    Location
    PAKISTAN
    Posts
    274

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    paki bhai jab mamlah islaam ka ho to koi b baat kisi ko samjani ya batani ho to mera bhai seraf or seraf quran hadees k hawalah da kar samjao......kisi paan walay ya kisi wakeel ki mesaal mat deya karo....yahi waja hai jo aap ko or hum ko islaam sa door lagai hai......meray bhai agar aap quran hadees sa koi baat b karo gay to kisi jorat nai k wo na manay...
    Quote Originally Posted by paki786 View Post
    بسم اللہ الرحمن الرحیم

    لولی آل ٹایم صاحب آپ کہتے ہیں کہ

    آپ کس طرح کہ سکتے ھیں کہ کسسی ایک آدمی کی تقلید کی جا سکتی ہے. کیا یہ ممکن ہے کہ جس آدمی کی تقلید کی جاے اوس کی ہر بات ٹھیک ہے


    جناب کسی ایسے شخص کی تقلید جس کی زندگی دین اسلام پر مقدور بھر ہو، ایسے شخص کی تقلید سے دین بڑی تیزی سے زندگی میں آتاہے، اور اللہ تعا لی خود قرآن پاک میں فرماتا ہے


    کو نوا مع الصادقین


    جسکا مفہوم ھے کہ


    سچوں کا ساتھ اختیار کرو


    اور آپ کہتے ہیں




    اگر آپ فقہ حنفی کو لیں یا فقہ شافی کو لیں یا فقہ حمبلی یا فقہ مالکی کو لقن کیا یہ صحیح ہے کہ ایس فقہ کی ساری باتیں صحیح ھیں.


    تو جناب فقہ کا مآخذ قرآن و حدیث ہے.


    اور امام ابو حنیفہ رحمتہ اللہ اور دوسرے آءمہ نے جو فقہ
    مرتب کی ہے اسکا مآخذ قرآن و حدیث ہے.




    اور جو یہ کہا گیا ہے کہ




    اگر یہ بات صحیح ہے تو این سب کو یہ کہنے کی ضرورت کیوں ہوئی کہ اگر ہماری بات قرآن اور حدیث سے ٹکرا جا ے تو دیوار سے مر دین


    تو اس با ت کا فیصلہ علماء کرام کریں تو بہتر ہے اسکو یوں سمجھیں کسی مقدم میں ماہرانہ راءے لینے کے لے آپ کسی پان والے سے رجوع نہیں کرںیگے بلکہ کسی ماہر وکیل سے ہی رابطہ کریںگے بصورت دیگر نقصان کا اندیشہ ھے یہی سوچ اگر دین کے معاملے میں بھی اختیار کی جاے تو غقلمندی


    آپ نے نسائ شریف کی حدیث پاک اور ھدایہ کی عبارت میں جو تناقص ظاھھر کیا ہے وہ صحیح نہیں
    اگر آپ نسائ شر یف کے مزکورہ باب میں اور احادیث مبارکہ پر غور کریں تو یہ بات واضح ہو جا ہیگی کہ یہ
    عمل مکروہ ھے اور مکروہ اور حرام میں فرق ھے




    lovelyalltime likes this.

  3. #23
    iTT Captain Rahi's Avatar
    Join Date
    Feb 2009
    Location
    Karachi
    Age
    61
    Posts
    1,198

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Ayat-33-1.gif

    بڑی عجیب بات ہے جو آپ نے بیان کی ہے، اتنے مشہور علماء کہلانے والے کس طرح دین سے لوگوں کو دور کررہے ہیں، جبکہ حقیقت یہ ہے کہ پہنچادو دوسروں تک چاہے ایک آیت ہی ہو، اس پر کس طرح عمل ہوسکے گا۔ جب پڑھیں گے تو آگے بڑھاہیں گے۔اللہ ہمیں بھی اور ان علماء کہلانے والوں کو ۔بھی ہدایت دےآمین
    Last edited by Rahi; 6th December 2011 at 08:38 AM.
    lovelyalltime likes this.

  4. #24
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    *
    Attached Images Attached Images

  5. #25
    iTT Star udaasc's Avatar
    Join Date
    Aug 2008
    Location
    PAKISTAN
    Posts
    274

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    جزاک اللہ

  6. #26
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    thanks

  7. #27
    iTT Student
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Pakistan
    Age
    22
    Posts
    12

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    zbrdst

  8. #28
    Mujahid M.Zaibkhan's Avatar
    Join Date
    Sep 2008
    Location
    Karachi
    Age
    29
    Posts
    4,237

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    lovelytime@ chapu master tum nahi sudro gay kya.
    peechli behas hi kafi hai sudes k sath jo huwi thi.
    Sudes to bhag giya magar uska bhai chapu master reh giya.
    sudes to phir bhi acha tha hamari baat ko quotation mein jawab deta tha magar uska bhai to chapayi pay chapayi karta hai

  9. #29
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    ...............

  10. #30
    iTT Student
    Join Date
    Nov 2012
    Location
    Faisalabad,Pakistan
    Age
    31
    Posts
    58

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    سب مسلمان بھائی کو چاہیے کہ قرآن پھرحدیث پر عمل کریں۔

  11. #31
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا


  12. #32
    iTT Student
    Join Date
    Nov 2012
    Location
    Faisalabad,Pakistan
    Age
    31
    Posts
    58

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    اللہ تعالی ہماری مدد فرمائے آمین۔

  13. #33
    Senior Student
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Karachi
    Posts
    142

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Quote Originally Posted by Rahi View Post
    Ayat-33-1.gif

    بڑی عجیب بات ہے جو آپ نے بیان کی ہے، اتنے مشہور علماء کہلانے والے کس طرح دین سے لوگوں کو دور کررہے ہیں، جبکہ
    حقیقت یہ ہے کہ پہنچادو دوسروں تک چاہے ایک آیت ہی ہو، اس پر کس طرح عمل ہوسکے گا۔ جب پڑھیں گے تو آگے بڑھاہیں گے۔اللہ
    ہمیں بھی اور ان علماء کہلانے والوں کو ۔بھی ہدایت دےآمین
    حدثنا آدم،‏‏‏‏ حدثنا شعبة،‏‏‏‏ حدثنا محمد بن زياد،‏‏‏‏ قال سمعت أبا هريرة ـ رضى الله عنه ـ قال أخذ الحسن بن علي ـ رضى الله عنهما ـ تمرة من تمر الصدقة،‏‏‏‏ فجعلها في فيه،‏‏‏‏ فقال النبي صلى الله عليه وسلم ‏"‏ كخ كخ ـ ليطرحها ثم قال ـ أما شعرت أنا لا نأكل الصدقة ‏"‏‏


    ہم سے آدم بن ابی ایاس نے بیان کیا انہوں نے کہا کہ ہم سے شعبہ نے بیان کیا انہوں نے کہا کہ ہم سے محمد بن زیاد نے بیان کیا کہا کہ میں نے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے سنا انہوں نے بیان کیا کہ حسن بن علی رضی اللہ عنہما نے صدقہ کی کھجوروں کے ڈھیر سے ایک کھجور اٹھا کر اپنے منہ میں ڈال لی تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا۔ چھی چھی! نکالو اسے۔ پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ کیا تمہیں معلوم نہیں کہ ہم لوگ صدقہ کا مال نہیں کھاتے۔

    صحیح بخاری ،کتاب الزکوٰۃ ،باب: نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی آل پر صدقہ کا حرام ہونا،حدیث نمبر : 1491

    ..................................
    فقال لها أبو بكر إن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ لا نورث ما تركنا صدقة

    ابو بکرنے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ" ہمارا ورثہ تقسیم نہیں ہوتا ' ہمارا ترکہ صدقہ ہے"
    صحیح بخاری ،کتاب فرض الخمس ،باب: خمس کے فرض ہونے کا بیان ،حدیث
    نمبر : 3093

    .................................

    فقال أبو بكر إن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ لا نورث،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ما تركنا فهو صدقة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إنما يأكل آل محمد من هذا المال

    ابوبکر نے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم خود فرماگئے ہیں کہ ہماری میراث نہیں ہوتی۔ ہم (انبیاء ) جو کچھ چھوڑ جاتے ہیں وہ صدقہ ہوتا ہے
    اور یہ کہ آل محمد کو ایسی صدقہ کے مال سے کھلایا جائے گا ۔

    صحیح بخاری
    کتاب فضائل اصحاب النبی
    باب: رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے رشتہ داروں کے فضائل اور فاطمہ بنت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فضائل کا بیان
    وقال النبي صلى الله عليه وسلم ‏"‏ فاطمة سيدة نساء أهل الجنة ‏"‏‏.‏
    اور آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ فاطمہ رضی اللہ عنہا جنت کی عورتوں کی سردار ہیں۔ حدیث نمبر: 3712

    .................................
    ستةٌ لَعَنْتُهم ولعنَهمْ اللهُ وكلُّ نبيٍّ مُجابٌ : الزائدُ في كتابِ اللهِ، والمُكَذِّبُ بقدَرِ اللهِ، والمُتسلطُ بالجبروتِ فيُعِزُّ بذلكِ منَ أَذَلَّ اللهُ ويذلُّ منْ أعزَّ اللهُ، والمستَحِلُّ لحَرِمِ اللهِ، والمستحلُّ منْ عِتْرَتِي ما حَرَّمَ اللهُ، والتاركُ لسنتِي

    عائشہ کے مطابق رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ " چھ وہ چیزیں ہیں جن پر میں لعنت بھیجتا ہوں اور اللہ بھی لعنت فرماتا ہے جبکہ ہر نبی کی دعا قبول ہوا کرتی ہے
    1۔ اللہ کی تقدیر کو جھٹلانے والا
    2۔ اللہ کی کتاب میں ذیادتی کرنے والا
    3۔ اللہ کے حکموں کو قابو میں کرنے والا
    4۔اللہ کی حرام کی ہوئی چیزوں کو حلال بنائے
    5۔ میری عترت (آل محمد(( کے لئے وہ چیز حلال بتائے جس کو اللہ نے حرام کیا ہے
    6۔ میری سنت کو چھوڑ دے

    الراوي: عائشة وعبدالله بن عمر المحدث: السيوطي - المصدر: الجامع الصغير - الصفحة أو الرقم: 4660
    خلاصة حكم المحدث: صحيح

    Last edited by bheram; 30th January 2013 at 02:57 AM.
    lovelyalltime likes this.

  14. #34
    Senior Student
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Karachi
    Posts
    142

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    فاطمة عليها السلام کی ناراضگی
    حدثنا أبو الوليد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ حدثنا ابن عيينة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن عمرو بن دينار،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن ابن أبي مليكة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن المسور بن مخرمة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ فاطمة بضعة مني،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ فمن أغضبها أغضبني ‏"‏‏.‏

    ہم سے ابوالولید نے بیان کیا، کہا ہم سے ابن عیینہ نے بیان کیا، ان سے عمرو بن دینار نے ان سے ابن ابی ملیکہ نے ان سے مسور بن مخرمہ رضی اللہ عنہ نے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: فاطمہ میرے جسم کا ٹکرا ہے، اس لیے جس نے اسےناراض کیا، اس نے مجھے ناراض کیا۔

    صحیح بخاری ،کتاب فضائل اصحاب النبی ،حدیث نمبر: 3714
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔

    فقال لها أبو بكر إن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ لا نورث ما تركنا صدقة ‏"‏‏.‏ فغضبت فاطمة بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم فهجرت أبا بكر،‏‏‏‏ فلم تزل مهاجرته حتى توفيت وعاشت بعد رسول الله صلى الله عليه وسلم ستة أشهر‏

    ابو بکرنے کہا کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ ہمارا ورثہ تقسیم نہیں ہوتا ہمارا ترکہ صدقہ ہے۔ فاطمہ بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم یہ سن کرابوبکرسے ناراض ہو گئیں اور ابوبکر سے ترک ملاقات کی اور وفات تک ان سے نہ ملیں۔ وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد چھ مہینے زندہ رہی تھیں۔

    صحیح بخاری کتاب فرض الخمس ،حدیث نمبر : 3093

    Last edited by bheram; 30th January 2013 at 03:01 AM.
    lovelyalltime likes this.

  15. #35
    iTT Student
    Join Date
    Feb 2013
    Location
    Nhin Btaongi
    Posts
    30

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    IMAM AZAM IMAM ABU HANIFA NE 1100000 se zaid masail ka hal pesh kiya(ye bad aqida log b mamte hain).iske bawjood unke taqwe ka ye maqaam ha k unhone apne shagirdonse farmaya k agar tumhain koi HADEES NABVI (SAL ALLAH HO ALIHI WA AALI WASAALAM) mil jaye tu meri baat chor dena.or unke taqwe ka maqam yahan dekho http://books.ahlesunnat.net/Imam-e-A...ex.php?start=3 or unke tamam fatw quran or hadees se sabit hain or har ek hawal majood ha.or logonko galt quide na karo aap.
    Last edited by Meher_e_Afroz; 26th February 2013 at 03:23 PM.

  16. #36
    iTT Student
    Join Date
    Nov 2012
    Location
    Faisalabad,Pakistan
    Age
    31
    Posts
    58

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    میں نہیں جانتا کے اس کتاب میں کیا ہے میں تو یہ جانتا ہوں کے اللہ اور اس کے رسول سےزیادہ علم والا کوئی نہیں
    کیوں کے مرنے کے بعد مِِں اللہ کے پاس جانے والا ہوں اور میں اللہ سے ڈرتا ہو۔اور اس کا فرماپردارہوں۔
    lovelyalltime and shizz like this.

  17. #37
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Quote Originally Posted by Meher_e_Afroz View Post
    IMAM AZAM IMAM ABU HANIFA NE 1100000 se zaid masail ka hal pesh kiya(ye bad aqida log b mamte hain).iske bawjood unke taqwe ka ye maqaam ha k unhone apne shagirdonse farmaya k agar tumhain koi HADEES NABVI (SAL ALLAH HO ALIHI WA AALI WASAALAM) mil jaye tu meri baat chor dena.or unke taqwe ka maqam yahan dekho Imam-e-Azam by Allama Syed Shah Turab ul Haq Qadri or unke tamam fatw quran or hadees se sabit hain or har ek hawal majood ha.or logonko galt quide na karo aap.




    امام ابو حنیفہ کے شاگردوں نے امام ابو حنیفہ کی ٢/٣ مسائل میں امام کی مخالفت کی ہے - اگر امام کی تمام باتیں قرآن اور حدیث کے مطابق ہی تھیں تو
    انکے شاگردوں نے مخالفت کیوں کی؟؟؟

    ١۔ امام ابو حنیفہ کہتے ہیں کہ نماز کے سات فرض ہیں صاحبین امام ابو یوسف اور امام محمد فرماتے ہیں کہ کل چھ فرض ہیں۔ امام صاحب فرماتے ہیں التحیات میں اگر وضو ٹوٹ جائے تو نماز نہیں ہوتی کیونکہ ساتواں فرض ابھی باقی ہے صاحبین کہتے ہیں ہو جاتی ہے کیونکہ چھ فرض پورے ہوچکے ہیں( ھدایہ؛ کتاب الصلوہ، باب الحدیث فی الصلوہ صفحہ ١٣٠)۔۔۔




    ٢۔ اگر بیوی کا خاوند لا پتہ ہوجائے تو کوئی امام کہتا ہے کہ عورت خاوند کی ١٢٠ سال کی عمر تک انتظار کرے، ایک روایت کے مطابق امام ابو حنیفہ کا یہی قول ہے--- حنفیوں کے زیادہ اماموں کی رائے ہے جب اس کے خاوند کی عمر کے تمام آدمی مرجائیں اس وقت تک انتظار کرے بعض کہتے ہیں ٩٠ سال انتظار کرے۔۔۔۔(ھدایہ کتاب المفقود صفحہ ٦٢٣)۔۔۔ایک حنفی عورت بیچاری کیا کرے کدھر جائے؟؟؟۔۔۔




    ٣۔ امام ابو حنیفہ فرماتے ہیں دو مثل سایہ ہو تو عصر کا وقت ہوتا ہےصاحبین فرماتے ہیں ایک مثل ہو تو وقت ہوتا ہے۔۔۔۔(ھدایہ کتاب الصلوہ بات المواقیت)۔۔۔




    ٤۔ امام صاحب فرماتے ہیں چار آدمی ہوں تو جمعہ ہو سکتا ہےصاحبین فرماتے ہیں تین ہوں تو ہو سکتا ہے۔۔۔(ھدایہ کتاب الصلوہ باب الصلوہ الجمعہ)۔۔۔




    ٥۔ اس کے علاوہ مستعمل پانی کو ہی لے لیں جس سے ہروقت واسطہ پڑتا ہے کوئی پاک کہتا ہے کوئی پلیت پھر اس میں اختلاف ہوتا ہے کہ کم پاک ہے یا زیادہ---- کم پلیدہے یا زیادہ۔۔۔
    (ھدایہ کتاب الطہارات باب الماء الذی یجوز بہ الوضوع)۔۔




    یہ صرف مثال کے طور پر ہیں نا کہ تضحیک کے طور پر

    حقیقت یہ ہے کے جن مسائل میں انہوں نے امام کے مسائل کو قرآن و حدیث کے خلاف پایا اور شاگردوں تک صحیح حدیث پونھچی تو حق بیان کردیا...یہی ہمارا مسلک ہے...
    ہمارے نزدیک امام ابو حنیفہ سمیت تمام آئمہ حق تھے اور انکے بعد کے بھی لوگ اور ان سے پہلے کے بھی لوگ وہ کسی کے مقلد نا تھے...الحمدللہ...تقلید تو اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلّم کے ٤٠٠ سال بعد شروع ہوئی

    .ہم یہ عقیدہ رکھتے ہیں کہ قرآن اور حدیث کو سلف صالحین کے طریقہ پر سمجھنا ہی فلاح اور کامیابی ہے اور انکے طریقے سے ہٹ کر روش اپنانا گمراہی ہے...سلف صالحین میں امام ابو حنیفہ سمیت آئمہ اربعہ بھی آگئے اور دیگر جلیل القدر علما بھی، علما حق ہر دور میں قرآن و حدیث اور سلف صالحین کے منہج کے مطابق فتاویٰ دیتے رہے ہیں اور اس معاملے میں تقلید شخصی کا کبھی شکار نہیں ہووے...مگر ہم ساتھ ہی یہ بھی سمجھتے ہیں کے ان آئمہ کے نقش قدم پہ چلنا قرآن اور حدیث کو اختیار کرنے کے لئے ہو...جہاں ان آئمہ میں سے کسی سے غلطی ہو اور علما اس کی نشاندہی کریں اور دیگر آئمہ کا اقوال قرآن اور صحیح حدیث کے عین مطابق ہوں تو ہم قرآن اور حدیث کی روشنی میں صحیح مسلے کو اختیار کرتے ہیں..ہمارا مقصد قرآن اور حدیث کی اتباع ہے نا کے آئمہ کی اندھی تقلید ، اس طرح ہمارے لئے تمام آئمہ برابر کا درجہ رکھتے ہیں ..یہی کام امام محمد نے اور امام یوسف نے کیا...جہاں امام ابو حنیفہ کو غلطی پر دیکھا تو باوجود انکا شاگرد ہونے کے حق بیان کیا اور امام کی مخالفت کی..اس سے نا امام کی توہین ہوئی نا ہی حق چھوٹا



    Last edited by lovelyalltime; 11th March 2013 at 07:02 PM.

    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  18. #38
    Senior Student
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Karachi
    Posts
    142

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    فاطمة عليها السلام کی ناراضگی

    حدثنا أبو الوليد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ حدثنا ابن عيينة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن عمرو بن دينار،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن ابن أبي مليكة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن المسور بن مخرمة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ فاطمة بضعة مني،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ فمن أغضبها أغضبني ‏"‏‏.‏

    ہم سے ابوالولید نے بیان کیا، کہا ہم سے ابن عیینہ نے بیان کیا، ان سے عمرو بن دینار نے ان سے ابن ابی ملیکہ نے ان سے مسور بن مخرمہ رضی اللہ عنہ نے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: فاطمہ میرے جسم کا ٹکرا ہے، اس لیے جس نے اسےناراض کیا، اس نے مجھے ناراض کیا۔

    صحیح بخاری ،کتاب فضائل اصحاب النبی ،حدیث نمبر: 3714
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔

    فقال لها أبو بكر إن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ لا نورث ما تركنا صدقة ‏"‏‏.‏ فغضبت فاطمة بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم فهجرت أبا بكر،‏‏‏‏ فلم تزل مهاجرته حتى توفيت وعاشت بعد رسول الله صلى الله عليه وسلم ستة أشهر‏

    ابو بکرنے کہا کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ ہمارا ورثہ تقسیم نہیں ہوتا ہمارا ترکہ صدقہ ہے۔ فاطمہ بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم یہ سن کرابوبکرسے ناراض ہو گئیں اور ابوبکر سے ترک ملاقات کی اور وفات تک ان سے نہ ملیں۔ وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد چھ مہینے زندہ رہی تھیں۔

    صحیح بخاری کتاب فرض الخمس ،حدیث نمبر : 3093

    کیا سمجھ میں آیا ان حدیثوں کو براہ راست سمجھنے سے

    حضرت فاطمہ علیھا السلام کی ناراضگی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ناراضگی ہے اور رسول اللہ کی ناراضگی یقنی طور سے اللہ تبارک تعالٰی کی ناراضگی ہے
    صحیح بخاری کی اس حدیث میں بیان ہوا کہ حضرت فاطمہ علیھا السلام ابوبکر سے اپنے وصال تک ناراض رہیں



  19. #39
    Moderator lovelyalltime's Avatar
    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    3,630

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Quote Originally Posted by bheram View Post
    فاطمة عليها السلام کی ناراضگی

    حدثنا أبو الوليد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ حدثنا ابن عيينة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن عمرو بن دينار،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن ابن أبي مليكة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن المسور بن مخرمة،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ فاطمة بضعة مني،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ فمن أغضبها أغضبني ‏"‏‏.‏

    ہم سے ابوالولید نے بیان کیا، کہا ہم سے ابن عیینہ نے بیان کیا، ان سے عمرو بن دینار نے ان سے ابن ابی ملیکہ نے ان سے مسور بن مخرمہ رضی اللہ عنہ نے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: فاطمہ میرے جسم کا ٹکرا ہے، اس لیے جس نے اسےناراض کیا، اس نے مجھے ناراض کیا۔

    صحیح بخاری ،کتاب فضائل اصحاب النبی ،حدیث نمبر: 3714
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔

    فقال لها أبو بكر إن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال ‏"‏ لا نورث ما تركنا صدقة ‏"‏‏.‏ فغضبت فاطمة بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم فهجرت أبا بكر،‏‏‏‏ فلم تزل مهاجرته حتى توفيت وعاشت بعد رسول الله صلى الله عليه وسلم ستة أشهر‏

    ابو بکرنے کہا کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ ہمارا ورثہ تقسیم نہیں ہوتا ‘ ہمارا ترکہ صدقہ ہے۔ فاطمہ بنت رسول الله صلى الله عليه وسلم یہ سن کرابوبکرسے ناراض ہو گئیں اور ابوبکر سے ترک ملاقات کی اور وفات تک ان سے نہ ملیں۔ وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد چھ مہینے زندہ رہی تھیں۔

    صحیح بخاری کتاب فرض الخمس ،حدیث نمبر : 3093

    کیا سمجھ میں آیا ان حدیثوں کو براہ راست سمجھنے سے

    حضرت فاطمہ علیھا السلام کی ناراضگی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ناراضگی ہے اور رسول اللہ کی ناراضگی یقنی طور سے اللہ تبارک تعالٰی کی ناراضگی ہے
    صحیح بخاری کی اس حدیث میں بیان ہوا کہ حضرت فاطمہ علیھا السلام ابوبکر سے اپنے وصال تک ناراض رہیں







    سلام

    میرے تقلید کے مارے اندھے بھائی

    جب کوئی

    احادیث پڑھے گا تو وہ شیعہ حضرا ت کی طرح صرف آپ کی پیش کردہ احادیث ہی

    نہیں

    پڑھے

    گا

    بلکہ

    یہ بھی پڑھے گا



    کتاب صحیح بخاری جلد 2 حدیث نمبر 1212 متفق علیہ 12


    ابراہیم بن موسی، ہشام، معمر، زہری، حضرت عروہ، حضرت عائشہ سے روایت کرتے ہیں کہ انہوں نے کہا کہ حضرت عباس اور حضرت فاطمہ الزہراء دونوں حضرت ابوبکر کے پاس آکر اپنا ترکہ زمین فدک اور آمدنی خیبر سے مانگنے لگے،
    حضرت ابوبکر نے فرمایا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا ہے کہ ہم لوگوں کا کوئی وارث نہیں ہوتا ہم جو کچھ چھوڑ جائیں وہ صدقہ ہے البتہ آل محمد صلی اللہ علیہ اپنی گزر کے لیے اس میں سے لے سکتے ہیں، رہا سلوک کرنا تو خدا کی قسم! میں رسول اکرم کے رشتہ داروں سے سلوک کرنے کو اپنے رشتہ داروں سے زیادہ پسند کرتا ہوں۔


    کتاب صحیح بخاری جلد 3 حدیث نمبر 1635


    عبد اللہ بن مسلمہ، مالک، ابن شہاب، عروہ، حضرت عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے روایت کرتے ہیں انہوں نے بیان کیا کہ جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو وفات ہوگئی تو آنحضرت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی بیویوں نے حضرت عثمان صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو حضرت ابوبکر رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے پاس بھیجنا چاہا تاکہ ان سے اپنی میراث طلب کریں،
    حضرت عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا نے کہا کہ کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے یہ نہیں فرمایا کہ ہمارا کوئی وارث نہیں ہوگا اور جو کچھ ہم نے چھوڑا ہے وہ صدقہ ہے۔



    قاله ابن عباس،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن النبي صلى الله عليه وسلم

    یہ حدیث حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کی ہے۔



    حدیث نمبر: 3654

    حدثني عبد الله بن محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ حدثنا أبو عامر،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ حدثنا فليح،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ قال حدثني سالم أبو النضر،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن بسر بن سعيد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ عن أبي سعيد الخدري ـ رضى الله عنه ـ قال خطب رسول الله صلى الله عليه وسلم الناس وقال ‏"‏ إن الله خير عبدا بين الدنيا وبين ما عنده فاختار ذلك العبد ما عند الله ‏"‏‏.‏ قال فبكى أبو بكر،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ فعجبنا لبكائه أن يخبر رسول الله صلى الله عليه وسلم عن عبد خير‏.‏ فكان رسول الله صلى الله عليه وسلم هو المخير وكان أبو بكر أعلمنا،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ فقال رسول الله صلى الله عليه وسلم ‏"‏ إن من أمن الناس على في صحبته وماله أبا بكر،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولو كنت متخذا خليلا غير ربي لاتخذت أبا بكر،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولكن أخوة الإسلام ومودته،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ لا يبقين في المسجد باب إلا سد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إلا باب أبي بكر ‏"‏‏.


    مجھ سے عبداللہ بن محمد نے بیان کیا، کہا ہم سے ابوعامر نے بیان کیا، ان سے فلیح بن سلیمان نے بیان کیا، کہا کہ مجھ سے سالم ابوالنضر نے بیان کیا، ان سے بسربن سعید نے اور ان سے حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے خطبہ دیا اور فرمایا کہ اللہ تعالیٰ نے اپنے ایک بندے کودنیا میں اور جو کچھ اللہ کے پاس آخرت میں ہے ان دونوں میں سے کسی ایک کا اختیار دیا تو اس بندے نے وہ اختیار کر لیا جو اللہ کے پاس تھا۔ انہوں نے بیان کیا کہ اس پر ابوبکر رضی اللہ عنہ رونے لگے۔ ابوسعید کہتے ہیں کہ ہم کو ان کے رونے پر حیرت ہوئی کہ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم تو کسی بندے کے متعلق خبردے رہے ہیں جسے اختیار دیا گیا تھا، لیکن بات یہ تھی کہ خود آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم ہی وہ بندے تھے جنہیں اختیار دیا گیا تھا اور (واقعتا) حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ ہم میں سب سے زیادہ جاننے والے تھے۔ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک مرتبہ فرمایا کہ اپنی صحبت اور مال کے ذریعہ مجھ پر ابوبکر کا سب سے زیادہ احسان ہے اور اگر میں اپنے رب کے سوا کسی کو جانی دوست بناسکتاتو ابوبکر کو بناتا۔ لیکن اسلام کا بھائی چارہ اور اسلام کی محبت ان سے کافی ہے۔ دیکھو مسجد کی طرف تمام دروازے (جو صحابہ کے گھروں کی طرف کھلتے تھے) سب بند کر دیئے جائیں۔ صرف ابوبکر رضی اللہ عنہ کا دروازہ رہنے دو۔





    صحیح بخاری

    کتاب فضائل اصحاب النبی









    آپ نے جو حوالے پیش کیے

    وہ تو آپ کے اپنے خلاف ہیں

    آپ خود ان احادیث سے ثابت کر رھے ہیں کہ تقلید جائز نہیں

    کیوں کہ یہاں حضرت ابو بکر راضی اللہ اور حضرت عائشہ صدیقہ راضی اللہ حضور

    صلی اللہ وسلم

    کی حدیث پیش کر رھے ہیں

    اور جہاں صحیح احادیث آ جاے وہاں ہر بندے کی بات کو رد کر دیا جا ے گا

    حضور صلی اللہ وسلم کی صحیح حدیث کے مقابلے میں حضور صلی اللہ وسلم کی بیٹی

    کی بات کو بھی نہیں مانا گیا

    اور کتنی حیرت کی بات ہے کہ

    آپ لوگ اپنے امام صاحب کی بات کو صحیح احادیث آ جانے پر بھی رد نہیں کرتے

    ایک اور حدیث بھی پڑھنے والا پڑھے گا

    آپ بھی پڑھ لیں

    جامع ترمذی:جلد اول:حدیث نمبر 804

    حَدَّثَنَا عَبْدُ بْنُ حُمَيْدٍ أَخْبَرَنِي يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ بْنِ سَعْدٍ حَدَّثَنَا أَبِي عَنْ صَالِحِ بْنِ کَيْسَانَ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ أَنَّ سَالِمَ بْنَ عَبْدِ اللَّهِ حَدَّثَهُ
    أَنَّهُ سَمِعَ رَجُلًا مِنْ أَهْلِ الشَّامِ وَهُوَ يَسْأَلُ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عُمَرَ عَنْ التَّمَتُّعِ بِالْعُمْرَةِ إِلَی الْحَجِّ فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ هِيَ حَلَالٌ فَقَالَ الشَّامِيُّ إِنَّ أَبَاکَ قَدْ نَهَی عَنْهَا فَقَالَ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ أَرَأَيْتَ إِنْ کَانَ أَبِي نَهَی عَنْهَا وَصَنَعَهَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَأَمْرَ أَبِي نَتَّبِعُ أَمْ أَمْرَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ الرَّجُلُ بَلْ أَمْرَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ لَقَدْ صَنَعَهَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ

    جامع ترمذی:جلد اول:حدیث نمبر 804

    عبد بن حمید، یعقوب بن ابراہیم بن سعد، ابوصالح بن کیسان، ابن شہاب سے روایت ہے کہ ان سے سالم بن عبداللہ نے بیان کیا کہ
    انہوں نے ایک شامی کو حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ تعالی عنہ سے حج کے ساتھ عمرے کو ملانے (یعنی تمتع) کے متعلق سوال کرتے ہوئے سنا۔ عبداللہ بن عمر رضی اللہ تعالی عنہ نے فرمایا یہ جائز ہے - شامی نے کہا آپ کے والد نے اس سے منع کیا ہے۔ حضرت ابن عمر رضی اللہ تعالی عنہ نے فرمایا دیکھو اگر میرے والد کسی کام سے منع کریں اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم وہی کام کریں تو میرے والد کی اتباع کی جائے گی یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی۔ شامی نے کہا کہ نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی۔ ابن عمر رضی اللہ تعالی عنہ نے فرمایا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے تمتع کیا ہے یہ حدیث صحیح ہے۔

    پڑھنے والا یہ بھی پڑھے گا













    Last edited by lovelyalltime; 1st April 2013 at 09:00 PM.

    مجھے اللہ کافی ہے۔اس کے سوا کوئی معبود نہیں ، میرا بھروسہ اسی پر ہے اور وہی عرش عظیم کا مالک ہے

  20. #40
    iTT Student shizz's Avatar
    Join Date
    Nov 2011
    Location
    karachi,pakistan
    Posts
    76

    Re: کیا قرآن و حدیث براہ راست سمجھنا باعث گمرا

    Quote Originally Posted by Meher_e_Afroz View Post
    IMAM AZAM IMAM ABU HANIFA NE 1100000 se zaid masail ka hal pesh kiya(ye bad aqida log b mamte hain).iske bawjood unke taqwe ka ye maqaam ha k unhone apne shagirdonse farmaya k agar tumhain koi HADEES NABVI (SAL ALLAH HO ALIHI WA AALI WASAALAM) mil jaye tu meri baat chor dena.or unke taqwe ka maqam yahan dekho Imam-e-Azam by Allama Syed Shah Turab ul Haq Qadri or unke tamam fatw quran or hadees se sabit hain or har ek hawal majood ha.or logonko galt quide na karo aap.
    fiqa hanafi ki bunyad zaeef ahadees pr rakhi gai hai,
    unki bat pr ap logon ne amal nhi kia k jb unho ne kaha k meri bat Quran or hadees k khilaf nazar ae to chor dena, hm jb jb ap logon k samne sahih ahadees pesh krte hain ap imam sahab k qol ko chorne k bajae us hadees ko hi chor dete hain,

    lovelyalltime likes this.
    http://www.islamghar.blogspot.com/

Page 2 of 3 FirstFirst 123 LastLast

Similar Threads

  1. Replies: 0
    Last Post: 27th August 2011, 05:50 AM
  2. Replies: 2
    Last Post: 7th May 2011, 02:30 AM
  3. Replies: 4
    Last Post: 26th March 2011, 03:19 AM
  4. Replies: 2
    Last Post: 10th October 2010, 04:30 PM
  5. Replies: 10
    Last Post: 28th June 2010, 04:30 PM

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •