السلام علیکم ورحمتہ الللہ و برکاتہ

آلو کے خاندان سے تعلق رکھنے والی مشہور جڑ شکر قند کا سائنسی پیمانوں پر تجزیہ کرنے سے معلوم ہوا ہے کہ جسمانی کمزوری سے پریشان ایسے افراد جو دبلے پن سے چھٹکارا پانے کیلئے باڈی بلڈنگ، ثقیل اغذیہ اور چربیلے مادوں پر مشتمل غذا لیتے ہیں اسی طرح جو افراد دوائیں کھاکر اپنے جسم کے کمزور حصوں کو بھرنے کی کوشش کرتے ہیں، ان سب کیلئے محض شکرقند کا استعمال کرلینا ہی کافی ہے۔
اسے دودھ میں ملاکر کھیر بناکر کھانے سے ایک تو حس ذائقہ کی تسکین ہوتی ہے اور دوسرے یہ جسم کو طاقتور اور فربہ بناتی ہے۔ اسی طرح اگر اسے محض چینی کے ہمراہ استعمال کیا جائے تو بے حد مفید ہے۔ اسی طرح اس کا حلوہ بناکر کھانے سے جسم کو بہت زیادہ غذائیت حاصل ہوتی ہے، جسمانی کمزوری دور کرنے کیلئے شکر قند کا حلوہ ایک بہترین قدرتی غذا ہے۔ آئیے! اب ہم شکر قند کے مقوی حلوے کی ترکیب ملاحظہ کرتے ہیں۔ شکر قند کو باریک باریک ٹکڑوں میں کاٹ کر خشک کرلیں اس کے بعد کوٹ لیں اور چھان کر آٹا بنائیں۔ تقریباً 30 گرام یہ آٹا 25 گرام گھی میں بھونیں اور آدھا پائو چینی یا شہد کا قوام شامل کرکے حلوا بنالیں۔ اگر چاہیں تو ذائقے اور غذائیت میں اضافے کیلئے اس میں بادام، پستہ اور کھوپرے کی گریاں باریک کتر کر ملادیں۔
فربہ افراد اور وہ لوگ جن کا معدہ پہلے ہی کمزور ہویعنی بد ہضمی کا شکار رہتے ہوں انہیں شکر قند کے استعمال سے پرہیز کرنا چاہیے لیکن شکر قند کے ثقیل پن اور دیر ہضم ہونے کی اصلاح شہد سے کی جاسکتی ہے۔ اس طرح ہر فرد کیلئے اس کا استعمال موثر اور توانائی کے حصول کا ایک عمدہ قدرتی ذریعہ بن جاتا ہے۔ جسمانی کمزوری دور کرنے اور صنفی طور پر طاقتور ہونے کیلئے شکر قند کا صبح نہار منہ ناشتے کی صورت میں استعمال بھی بہت مفید ہے۔ اس کیلئے کم از کم سو گرام شکر قند ابال کر کھائیں اس کے ساتھ 12 دانے بادام کی گری اور تقریباً 25 گرام کشمش را ت کو پانی میں بھگو کر رکھیں اور صبح شکر قند کے ہمراہ پانی پھینک کر کھالیں اور پھر ایک گلاس دودھ میں ایک چمچ شہد ملاکر پی لیں اس طرح کچھ ہی عرصے میں آپ ذہنی اور جسمانی طور پر بالیدہ ہوسکتے ہیں۔ اگر آپ باقاعدگی سے ورزش کرتے ہیں تو اس کے مفید اثرات اور بھی جلد سامنے آنا شروع ہوجاتے ہیں۔